Reciter: Mir Hasan Mir , Mir Jawad Mir

Amma Fizza Lyrics In Urdu By Mir Hasan Mir, Mir Jawad Mir

اماں فضہ اماں فضہ

اماں فضہ بتا دے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

کیسا ہے یہ چراغاں
دل ڈوبے جا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

اتنا چلے ہیں پیدل کانٹوں پہ سارے قیدی
تھک جاتی چلتے چلتے چلتی اگر زمیں بھی
پیروں کے آبلے بھی آنسو بہا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

ہیں لوگ کس طرح کے ہم سے دعا کرائیں
اے قیدیوں دعا دو یہ دن نہ ہم پہ آئیں
لے کر دعائیں ہم سے دل بھی دکھا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

نیزوں پہ جتنے سر ہیں اک سر ہے ان میں ایسا
آنکھیں ہیں بند اس کی اور خاک پر ہے گرتا
عباس کا یہ سر ہے تیور بتا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

ماؤں کی گودیوں سے لپٹے ہوئے ہیں بچے
ہیں ہاتھ رسیوں میں ماؤں کے ایسے جکڑے
بچے جو گر رہے ہیں وہ مرتے جا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

نیزے پہ رو رہا ہے مشکل کشا کا بیٹا
نا محرموں کے لب پر آیا ہے نام میرا
مجھ کو کنیز زادے یوں بھی رلا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

سجاد کا کلیجہ سد پاش ہو رہا ہے
اک اک زخم ان کا اس غم میں رو رہا ہے
زینب کا نام لے کر اعدا بلا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

ریحان قیدیوں میں باپا ہے شور گریہ
پلکوں سے کر رہی ہیں ماتم جو بنت زہرا
سجاد نوحہ خواں ہیں نوحہ سنا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

کیسا ہے یہ چراغاں
دل ڈوبے جا رہے ہیں
کیا شام آ گیا ہے

اماں فضہ بتادے مجھ کو
پتھر کیوں آ رہے ہیں

اماں فضہ اماں فضہ

Amma Fizza Amma Fizza

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Kaisa Hai Yeh Charaghan
Dill Doobay Ja Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Itna Chalay Hain Paidal Kaanton Py Saray Qaidi
Thak Jati Chaltay Chaltay Chalti Agar Zameen Bhi
Pairon Ky Aablay Bhi Aansoo Baha Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amman Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Hain Log Kis Tarah Kay Hum Say Dua Karayen
Ay Qaidiyon Dua Do Yeh Din Na Hum Py Ayen
Lay Kar Duayen Hum Say Dill Bhi Dukha Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Naizon Py Jitnay Sar Hain Ek Sar Hai Un Mein Aisa
Ankhen Hain Band Us Ki Aur Khak Par Hai Girta
Abbas Ka Yeh Sar Hai Taiwar Bata Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Maaon Ki Godiyon Say Liptay Huye Hain Bachay
Hain Hath Rassiyon Mein Maaaon Ky Aisay Jakrhay
Bachay Jo Gir Rahay Hain Woh Martay Ja Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Naizay Py Ro Raha Hai Mushkil Kusha Ka Beta
Na Mehramon Ky Lab Par Aaya Hai Naam Mera
Mujh Ko Kaneez Zaday Yun Bhi Rula Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Sajjad Ka Kalaija Sad Paash Ho Raha Hai
Ek Ek Zakhm Un Ka Is Gham Mein Ro Raha Hai
Zainab Ka Naam Lay Kar Ahdaa Bula Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Rehan Qaidiyon Mein Barpa Hai Shor E Giriya
Palkon Say Kar Rahi Hain Matam Jo Binte Zahra
Sajjad Hain Noha Suna Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Kaisa Hai Yeh Charaghan
Dill Doobay Ja Rahay Hain
Kya Shaam Aa Gaya Hai

Amma Fizza Bata Day Mujh Ko
Pathar Kiun Aa Rahay Hain

Amma Fizza Amma Fizza

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply