Reciter: Ali Safdar

Barchhee Ka Zakhm Lyrics In Urdu By Ali Safdar

ہائے اکبر ہائے ہائے اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر
ماں نے کلیجہ تھامادوڑیں پھوپھی تڑپ کر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

گھوڑے سے گرتے گرتے اکبر پکارتے ہیں
بابا سلام آخر میرا قبول کر لیں
سن کر صدا پسر کی دوڑے ہیں رن کو سرور
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

کیا ظلم کربلا میں ڈھایا ستم گروں نے
ہم شکل مصطفی کو مارا ہے ظالموں نے
ہے خاک و خوں میں غلطاں عکس رخ پیمبر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

اکبر کی لاش اٹھانے شبیر جا رہے ہیں
ہر ہر قدم پے ٹھوکر میداں میں کھا رہے ہیں
خیمے کے در سے مادر یہ دیکھتی ہے منظر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

جب اٹھ سکا نہ لاشہ شبیر سے پسر کا
تحریر کس طرح ہو جو حال تھا پدر کا
میت جواں کی ہائے بچوں کے ساتھ مل کر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

رخ کر کے سوئے یثرب زینب نے یہ صدا دی
قاتل نے نانا تری تصویر بھی مٹا دی
اب خوف ہے کہ سر پر باقی رہے نہ چادر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

اے کلمہ گویوں کچھ تو کلمے کا پاس کرتے
بغض علی میں اتنی پستی میں تم نہ گرتے
سبط نبی کو مارا کلمہ نبی کا پڑھ کر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

بعد رسول یا رب کیا انقلاب آیا
آل نبی کو کیسا امت نے ہے ستایا
بکھرے ہوئے ہیں بن میں زہرا کے لعل و گوہر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

اب تک ظفر صدائے مظلوم آ رہی ہے
یہ کربلائے حاضر ان کو بلا رہی ہے
کانوں میں گونجتی ہے اب تک اذان اکبر
رن میں گرے ہیں اکبر

برچھی کا زخم کھا کر رن میں گرے ہیں اکبر

Haye Akbar Haye Haye Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar
Maan Ny Kalaija Thama Dorheen Phuphi Tarhap Kar

Barchhee Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Ghorhy Sy Girty Girty Akbar Pukarty Hain
Baba Salam E Akhir Mera Qubool Kar Len
Sun Kar Sada Pisar Ki Dorhy Hain Ran Ko Sarwar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Kya Zulm Karbala Mein Dhaya Sitam Garon Ny
Ham Shakal E Mustafa Ko Mara Hai Zalimon Ny
Hai Khak O Khoon Mein Ghaltaan Aks E Rukh E Payambar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Akbar Ki Lash Uthany Shabbir Ja Rahy Hain
Har Har Qadam Py Thokar Maidan Mein Kha Rahy Hain
Khaimy Ky Darr Sy Madar Yeh Dekhti Hai Manzar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Jab Uth Saka Na Lasha Shabbir Sy Pisar Ka
Tehreer Kis Tarah Ho Jo Haal Tha Padar Ka
Mayyat Jawan Ki Haye Bachon Ky Sath Mill Kar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Rukh Kar Ky Sooye Yasrab Zainab Ny Yeh Sada Di
Qaatil Ny Nana Teri Tasweer Bhi Mita Di
Ab Khaof Hai Keh Sar Par Baqi Rahy Na Chadar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Ay Kalma Goyon Kuch To Kalmy Ka Paas Karty
Bughz E Ali Mein Itna Pasti Mein Tum Na Girty
Sibte Nabi Ko Maara Kalma Nabi Ka Parh Kar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Baad E Rasool Ya Rab Kya Inqalaab Aya
Aal E Nabi Ko Kaisa Ummat Ny Hai Sataya
Bikhry Huye Hain Bann Mein Zehra Ky Laal O Gohar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Ran Mein Giry Hain Akbar

Ab Tak Zafar Sadaye Mazloom Aa Rahi Hain
Yeh Karbala E Hazir Un Ko Bula Rahi Hai
Kaanon Mein Goonjti Hai Ab Tak Azan E Akbar
Rann Mein Giry Hain Akbar

Barchi Ka Zakhm Kha Kar Rann Mein Giry Hain Akbar

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply