Reciter: Ahmed Raza Nasiri

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao Lyrics In Urdu By Ahmed Raza Nasiri

ہائے
فاطمہ کی ہے یہ صدا مہدی
کر کے نوحہ علی کی غربت پر
زخم میرے سبھی شمار کرو
بیٹھ کر آج ماں کی تربت پر
درد دل کے کرو بیاں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

داغ آنکھوں پہ بہتے اشکوں کے
کم سنی میں سفیدی بالوں کی
نیل چہرے پہ اک تمانچے کا
سرخی ہاتھوں پہ تازیانوں کی
دیکھو غربت کے سب نشاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

بنت احمد کو بعد پیغمبر
پرسہ دیتے ہیں شعلے دکھلا کر
باب عصمت سے شور اٹھتا ہے
لوگ دیتے ہیں دھمکیاں آ کر
میرا جلتا ہے آشیاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

جان مادر میری نگاہوں سے
گھر کا آنگن دھواں دھواں دیکھو
لے گئے ہیں علی کو پہنا کر
کیسے گردن میں ریسماں دیکھو
صبر و غیرت کے آسماں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

دیکھ پہلو شکستہ تھامے ہوئے
کیسے دربار ماں تمھاری گئی
میری آنکھوں کے سامنے بیٹا
میرے حق کی سند بھی پھاڑی گئی
ظلم کی سن لو داستاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

ہائے افسوس اب بھی امت کو
قتل محسن پہ کچھ ملال نہیں
میری آغوش سے جو چھینا وہ
کوئی باغ فدک کا مال نہیں
ہو میرے منتقم کہاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

لوگ ماریں نہ پھر کہیں پتھر
قید اب دختر حسین نہ ہو
روئے تنہا نہ شام میں زینب
وا حجابا کا لب پہ بین نہ ہو
میری بیٹی کو دو اماں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

غیب سے فاطمہ کی جاں آؤ
بین یہ کر رہی ہے ماں آؤ

Haye
Fatima Ki Hai Yeh Sada Mehdi
Kar Ky Noha Ali Ki Ghurbat Par
Zakhm Meray Sabhi Shumar Karo
Beth Kar Aaj Maan Ki Turbat Par
Dard Dill Ky Karo Bayan Aao

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Dagh Ankhon Py Behty Ashkon Kay
Kam Sini Mein Safaidi Balon Ki
Neel Chehray Pay Ek Tamanchay Ka
Surkhi Hathon Pay Taziyanon Ki
Daikho Ghurbat Kay Sab Nishan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Bint E Ahmed Ko Baad E Payghambar
Pursa Detay Hain Shoalay Dikhla Kar
Bab E Ismat Say Shor Uthta Hai
Log Detay Hain Dhamkiyan Aa Kar
Mera Jalta Hai Aashiyaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Jan E Madar Meri Nigahon Say
Ghar Ka Aangan Dhuwan Dhuwan Daikho
Lay Gaye Hain Ali Ko Pehna Kar
Kaisay Gardan Mein Reesman Daikho
Sabr O Ghairat Kay Aasman Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Daikh Pehloo Shikasta Thamay Huye
Kaisay Darbar Maan Tumhari Gai
Meri Ankhon Ky Samnay Baita
Meray Haq Ki Sanad Bhi Pharhi Gai
Zulm Ki Sun Lo Daastan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Haye Afsos Ab Bhi Ummat Ko
Qatl E Mohsin Pay Kuch Malal Nahi
Meri Aghosh Say Jo Cheena Woh
Koi Bagh E Fidak Ka Maal Nahi
Ho Meray Muntaqim Kahan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Ghaib Say Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Log Maren Na Phir Kahin Pathar
Qaid Ab Dukhtar E Hussain Na Ho
Roye Tanha Na Sham Mein Zainab
Waa Hijaba Ka Lab Pay Bayn Na Ho
Meri Beti Ko Do Amaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Ghaib Se Fatima Ki Jaan Aao
Bayn Yeh Kar Rahi Hai Maan Aao

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply