Ghareeb Baba Haye O Mera Ghareeb Baba Lyrics Ali Jee Noha

Urdu Noha Ghareeb Baba Haye O Mera Ghareeb Baba Lyrics in English and Urdu recited by Ali Jee. Find out more noha lyrics by Ali Jee similar to lyrics of Ghareeb Baba Haye O Mera Ghareeb Baba on Khairilamal.

Ghareeb Baba Haye O Mera Ghareeb Baba Lyrics in English

Haye O Mera Ghareeb Baba
Haye O Mera Ghareeb Baba

Ay Sham Dy Logo
Main Syed Han

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Bazar E Sham Ka Majma Tha
Sajjad Ghareeb Ka Noha Tha
Kiun Baaghi Baaghi Kehty Ho
Kya Jurm Tha Mery Baba Ka
Sajdy Mein Namazi Qatl Kiya
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Mera Baba Shaan E Rasool Allah
Mera Baba Jaan E Madina Tha
Choda, Baara, Paanch Mein Bhi
Beshak Anmol Nageena Tha
Sadaat Ky Dil Ko Chaak Kiya
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Mera Baba Paak Namazi Tha
Allah Bhi Jis Sy Raazi Tha
Mera Baba Aisa Qaari Tha
Quran Bhi Jis Ka Haami Tha
Sajdy Mein Us Par Zulm Kiya
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Pehly To Pyar Sy Khat Likh K
Dhoky Sy Bulaya Baba Ko
Phir Karb O Bala Ky Sehra Mein
Kitna Hai Sataya Baba Ko
Mehman Bana Kar Loot Liya
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Batlao Kya Mera Baba
Ik Kafan Ka Bhi Haqdaar Na Tha
Batlao Kya Mera Baba
Nana Ka Wirsa Daar Na Tha
Laakhon Ny Us Ko Ghair Liya
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Na Kafan Mila, Na Dafan Hua
Mera Baba Pyasa Maar Diya

Haye O Mera Ghareeb Baba
Haye O Mera Ghareeb Baba

Ghareeb Baba, Haye O Mera Ghareeb Baba Lyrics in Urdu

ہاے او میرا غریب بابا
ہائے او میرا غریب بابا

اے شام دے لوگو میں سید ہاں

ہائے او میرا غریب بابا
نا کفن ملا، نہ دفن ہوا
میرا بابا پیاسا مار دیا

بازار شام کا مجمعہ تھا
سجاد غریب کا نوحہ تھا
کیوں باغی باغی کہتے ہو
کیا جرم تھا میرے بابا کا
سجدے میں نمازہ قتل کیا
میرا بابا پیاسا مار دیا

ہائے او میرا غریب بابا
نا کفن ملا، نہ دفن ہوا
میرا بابا پیاسا مار دیا

میرا بابا شان رسول اللہ
میرا بابا جان مدینہ تھا
چودہ، بارہ، پانچ میں بھی
بے شک انمول نگینہ تھا
سادات کے دل کو چاک کیا
میرا بابا پیاسا مار دیا

ہائے او میرا غریب بابا
نا کفن ملا، نہ دفن ہوا
میرا بابا پیاسا مار دیا

میرا بابا پاک نمازی تھا
اللہ بھی جس سے راضی تھا
میرا بابا ایسا قاری تھا
قرآن بھی جس کا حامی تھا
سجدے میں اس پر ظلم کیا
میرا بابا پیاسا مار دیا

ہائے او میرا غریب بابا
نا کفن ملا، نہ دفن ہوا
میرا بابا پیاسا مار دیا

پہلے تو پیار سے خط لکھ کے
دھوکے سے بلایا بابا کو
پھر کرب و بلا کے سہرا میں
کتنا ہے ستایا بابا کو
مہمان بنا کر لوٹ لیا
میرا بابا پیاسا مار دیا

ہائے او میرا غریب بابا
نا کفن ملا، نہ دفن ہوا
میرا بابا پیاسا مار دیا

بتلاو کیا میرا بابا
اک کفن کا بھی حقدار نہ تھا
بتلاو کیا میرا بابا
نانا کا ورثہ دار نہ تھا
لاکھوں نے اس کو گھیر لیا
میرا بابا پیاسا مار دیا

ہائے او میرا غریب بابا
نا کفن ملا، نہ دفن ہوا
میرا بابا پیاسا مار دیا

ہائے او میرا غریب بابا
ہائے او میرا غریب بابا

Leave a Reply

Your email address will not be published.