Mohsin Ka Ghum Lyrics Shadman Raza Noha 2021

Urdu Noha Mohsin Ka Ghum Lyrics in English and Urdu recited by Shadman Raza in 2021. Find out more noha lyrics by Shadman Raza similar to lyrics of Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai on Khairilamal.

Mohsin Ka Ghum Lyrics in English

Baba Baba Ay Mere Baba

Baba Darwaza Bhi Ummat Ny Jalaya Mera
Mujh Py Darwaza Giraya Mera Pehloo Toota

Dard Jitny Hain Mere Dil Mein Sunati Hun Tumhen
Dard Pehloo Ka Abhi Tak Na Hua Kam Baba

Mujh Ko Mohsin Ka Gham Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Aik Maan Hun Main Dil Tarhapta Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Meri Halat Py Yeh Bachy Bhi Hain Bechain Mere
Dekh Kar Hal Mera Roty Hain Hasnain Mere
In Ka Rona Mujhy Rulata Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Aap Ky Jany Sy Main Toot Gai Hun Baba
Dekhiye Mujh Ko Zaeefa Si Hui Hun Baba
Gham Mujhy Aap Ka Satata Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Baba Main Aap Ki Beti Hun Yeh Sab Janty Hain
Phir Bhi Sadeeqa Mujhy Log Nahi Manty Hain
Mujh Ko Jhutlaya Yeh Bhi Shikwa Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Sab Ky Darwazy Py Main Ly K Yeh Faryad Gai
Baba Logon Ny Wilayat Ki Gawahi Bhi Na Di
Dil Isi Ghum Sy Para Para Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Mujh Ko Rony Bhi Nahi Dety Madiney Waly
Log Kehty Hain K Ro Door Watan Sy Ja K
Is Ka Sadma Bhi Dil Py Gehra Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Mujh Ko Zalim Ny Tamanchey Sy Aziyat Di Hai
Hai Waram Chehry Py Takleef Magar Is Ki Hai
Sab Ny Rutba Mera Bhulaya Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Pharh Kar Phaink Di Tehreer Tumhari Baba
Cheen Li Zehra Sy Jageer Tumhari Baba
Dard Yeh Hai Ky Haq Bhi Cheena Hai
Haye Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Ay Dabeer Aj Bhi Giriya Bhi Baqaiyyeh Mein Bapa
Shadman Ro Ky Yeh Kehti Hai Nabi Sy Zehra
Haye Turbat Meri Shikasta Hai
Haye Zakhm Pehlu Ka Kam Nahi Baba

Waye Zahra Waye Zahra

Mujh Ko Mohsin Ka Ghum Rulata Hai
Zakhm Pehloo Ka Kam Nahi Baba

Haye Zahra Haye Zahra
Haye Zahra Haye Zahra

Mohsin Ka Ghum Lyrics in Urdu

بابا بابا ے میرے بابا

باب دروازہ بھی امت نے جلایا میرا
مجھ پہ دروازہ گرایا میرا پہلو ٹوٹا

درد جتنے ہیں میرے دل میں سناتی ہوں تمہیں
درد پہلو کا ابھی تک نہ ہوا کم بابا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

ایک ماں ہوں میں دل تڑپتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

میری حالت پہ یہ بچے بھی ہیں بے چین میرے
دیکھ کر حال میرا روتے ہیں حسنین میرے
ان کا رونا مجھے رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

آپ کے جانے سے میں ٹوٹ گئی ہوں بابا
دیکھئے مجھ کو ضعیفہ سی ہوئی ہوں بابا
غم مجھے آپ کا ستاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

بابا میں آپ کی بیٹی ہوں یہ سب جانتے ہیں
پھر بھی صدیقہ مجھے لوگ نہیں مانتے ہیں
مجھ کو جھٹلایا یہ بھی شکوہ ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

سب کے دروازے پہ میں لے کے یہ فریاد گئی
بابا لوگوں نے ولایت کی گواہی بھی نہ دی
دل اسی غم سے پارہ پارہ ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

مجھ کو رونے بھی نہیں دیتے مدینے والے
لوگ کہتے ہیں کہ رو دور وطن سے جا کے
اس کا صدمہ بھی دل پہ گھرا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

 

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

مجھ کو ظالم نے طمانچے سے اذیت دی ہے
ہے ورم چہرے پہ تکلیف مگر اس کی ہے
سب نے رتبہ میرا بھلایا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

پڑھ کر پھینک دی تحریر تمھاری بابا
چھین لی زہرا سے جاگیر تمھاری بابا
درد یہ ہے کہ حق بھی چھینا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

وائے زہرا وائے زہرا

مجھ کو محسن کا غم رلاتا ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

اے دبیر ان بھی گریہ ہے بقیہ میں بپا
شادماں رو کے یہ کہتی ہے نبی سے زہرا
ہائے تربت میری شکستہ ہے
زخم پہلو کا کم نہیں بابا

ہائے زہرا ہائے زہرا
ہائے زہرا ہائے زہرا

One response to “Mohsin Ka Ghum Lyrics Shadman Raza Noha 2021”

  1. shitolich says:

    com 20 E2 AD 90 20Buy 20Viagra 20Herbal 20 20Female 20Viagra 20Name 20In 20Nepal female viagra name in nepal BRASILIA, July 21 Reuters The Brazilian government needsto be clear in its next fiscal policy steps to bolsterinvestors confidence in an economy that is showing new signs ofweakness, central bank chief Alexandre Tombini was quoted assaying by a local newspaper on Sunday safe place to buy cialis online will be eligible to hit the free agent market in the next 4 5 years, assuming their current teams donГў

Leave a Reply

Your email address will not be published.