Reciter: Ahmed Raza Nasiri

Rooh E Shabbir Lyrics In Urdu By Ahmed Raza Nasiri

روح شبیر کی مقتل میں عزاداری ہے
اب بھی کانوں سے سکینہ کے لہو جاری ہے

روح شبیر کی

آج بھی قبر میں سہمی ہے میری شہزادی
شمر آ جائے گا اس پر یہ ستم طاری ہے

روح شبیر کی

ہڈیوں میں ہے دکھن اس کے سبب سے لوگو
ضرب ظالم نے جو دروں سے اسے ماری ہے

روح شبیر کی

سامنے لا کے بہاتے تھے ستم کر پانی
اس کی سوکھی ہوئی آنتوں کی یہ غم خواری ہے

روح شبیر کی

آج بھی پاؤں کے پنجے نہیں سیدھے ہوتے
جب تھی پابنت رسن جب سے یہ دشواری ہے

روح شبیر کی

نیل رخسار سکینہ پہ بہت گہرے ہیں
میری بچی پہ اذیت یہ بہت بھاری ہے

روح شبیر کی

ایک بدکار نے جو وار کنیزی کا کیا
وار یہ روح سکینہ پہ بہت کاری ہے

روح شبیر کی

اس میں شامل ہے سکینہ کی عطش ک صدقہ
یہ جو دنیا میں علم اور علمداری ہے

روح شبیر کی

اک دیا قبر سکینہ پہ جلانا یاسر
یہ علم خیر ہے یہ ہم سے وفاداری ہے

روح شبیر کی

Rooh E Shabbir Ki Maqtal Mein Azadari Hai
Ab Bhi Kaanon Say Sakina Ky Lahu Jari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Aaj Bhi Qabr Mein Sehmi Hai Meri Shehzadi
Shimr Aa Jaye Ga Us Par Yeh Sitam Tari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Hadiyon Mein Hai Dukhan Us Kay Sabab Say Logo
Zarb Zalim Nay Jo Durron Say Usay Mari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Samnay Laa Kay Bahatay Thay Sitam Gar Pani
Us Ki Sookhi Hui Aanton Ki Yeh Gham Khuwari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Aaj Bhi Paon Kay Panjay Nahi Seedhay Hotay
Jab Thi Paband E Rasan Jab Say Yeh Dushwari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Neel Rukhsar E Sakina Pay Bahut Gehray Hain
Meri Bachi Pay Aziyat Yeh Bahut Bhari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Aik Badkar Nay Jo Waar Kaneezi Ka Kiya
Waar Yeh Rooh E Sakina Pay Bahut Kaari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Is Mein Shamil Hai Sakina Ki Atash Ka Sadqa
Yeh Jo Duniya Mein Alam Aur Alamdari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Ek Diya Qabr E Sakina Pay Jalana Yasir
Yeh Amal Khair Hai Yeh Hum Say Wafadari Hai

Rooh E Shabbir Ki

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply