Reciter: Syed Zain Ali Zaidi

سقإ حرم غازی، زینب کا بھرم غازی
عباس عباس عباس عباس

عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا
سرداروں کے سردار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا
سرداروں کے سردار

زینب کا سہارا ہے، شبیر کا پیارا ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قا فلہ سالار

عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا
سرداروں کے سردار

قوت قلب حسین ابن علی شیر جری
سر تا پا حیدر کرار کا ہے عکس جلی
اے سکینہ کے چچا حضرت عباس علی
جو بھی ہمیں ملتا ہے، وہ سب تیرا صدقہ ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

تربیت ماں کی نظر آئے تری باتوں میں
ہے بسا عشق حسین ابن علی سانسوں میں
رعب حیدر سا ہے موجود تری آنکھوں میں
ایسا ترا لہجہ ہے، دشمن بھی لرزتا ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

تو ہی سقإ سکینہ، تو علمدار وفا
دونوں عالم کی ضرورت ترے پرچم کی ہوا
تجھ کو زہرا نے دعاوں میں طلب رب سے کیا
ہر دل میں تو بستا ہے، تو فخر خدا کا ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

ہے میرے باب حوائج ہے کرم سب پہ ترا
تو ہی بن ہاتھوں کے کرتا ہے زمانے کو عطا
آج تک در سے تیرے کوئی بھی خالی نہ گیا
جو قلب نے چاہا ہے، در سے تیرے پایا ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

راہ دشوار ہے، تو راہ بنا دے مولا
ہم ہیں بے چین، ہمیں بھی تو صدا دے مولا
کربلا ہم کو بھی اک بار دکھا دے مولا
ہاں بس وہی جاتا ہے، تو جس کو بلاتا ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

جس جگہ مشک چھدی، بازو کٹے، پانی بہا
ہو کے بے دست جہاں ہائے تو گھوڑے سے گرا
اس جگہ آج تلک ہے مرے عباس وفا
ماتم ترا برپا ہے، اب سب ترا قبضہ ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

زین پر تو نے کرم ایسا کیا ہے غازی
نوحہ پڑھنے سے مجھے روک نہ پایا کوئی
حوصلہ تو نے دیا، بن گئی پہچان میری
ذیشان بنایا ہے، احسان یہ تیرا ہے
تو شاہ کی جاں، شیر جواں، قافلہ سالار
عباس علی مولا، عباس علی مولا، عباس علی مولا

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply