Reciter: Farhan Ali Waris

Beti To Rehmat Hai Lyrics In Urdu By Farhan Ali Waris

خدا کسی پے اگر مہربان ہوتاہے
تو اس کو تحفے میں بیٹی عطا وہ کرتا ہے

بیٹی تو رحمت ہے

اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

رب اکبر کی مخصوص عنایت بیٹی
بیٹا ماں باپ کی نعمت ہے تو رحمت بیٹی
رات دن کرتی ہے ماں باپ کی خدمت بیٹی
دل ویراں کو بنا دیتی ہے جنت بیٹی
گلشن زیست کی ہر شاخ پھلی بیٹی سے
نسل پیغمبر اسلام چلی بیٹی سے

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

بیٹا ماں باپ کی دولت ہے امانت بیٹی
بیٹا ہے گھر کا چراغ اور عظمت بیٹی
بیٹا ماں باپ کی دنیا ہے تو جنت بیٹی
بیٹا ماں باپ کی طاقت ہے تو راحت بیٹی
آبرو کنبے کی بیٹی کی حیا ہوتی ہے
بیٹی ماں باپ کے زخموں کی دوا ہوتی ہے

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

ایک مزدور کی غربت کا خزانہ بیٹی
غم زدہ باپ کے ہنسنے کا بہانہ بیٹی
باپ کی ٹوٹتی سانسوں کا مسیحا بیٹی
باپ کے ہونٹوں کا مخصوص ترانہ بیٹی
باپ نے جیسے ہی اک بیٹی کا چہرہ دیکھا
یوں لگا جیسے کسی پیاسے نے دریا دیکھا

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

باپ کی راہ میں آنکھیں ہے بچھائے بیٹی
کبھی گھر میں کبھی دروازے پے آئے بیٹی
دن ڈھلے جیسے ہی اک باپ کو پائے بیٹی
کبھی سر اور کبھی پاؤں کو دبائے بیٹی
باپ سے ہنس کے گلے جب یہ ملا کرتی ہے
باپ کی ساری تھکن دور ہوا کرتی ہے

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

یہ ستائی گئی اپنے کبھی بے گانوں سے
آبرو اپنی بچاتی رہی شیطانوں سے
مسکرا کر یہ گزر جاتی ہے طوفانوں سے
کھیلتی رہتی ہے یہ اپنے ہی ارمانوں سے
ظلم سہہ سہہ کے بھی ہر اک کو دعا دیتی ہے
اشک پی لیتی ہے ہر غم کو چھپا لیتی ہے

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

گھر کی عزت کی نگہبان ہے سیرت اس کی
ایک انمول نگینہ ہے محبت اس کی
نور آنکھوں کا بڑھا دیتی ہے صورت اس کی
ہر کڑے وقت میں پڑتی ہے ضرورت اس کی
گھر میں رونق ہی نہیں ہوتی بنا بیٹی کے
ماں کا بدلہ ہی نہیں کوئی سوا بیٹی کے

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

باپ کو اس نے کسی رنج میں رونے نہ دیا
ایک بے سایہ کو ایثار کا سایہ بخشا
اس نے حالات کا اپنے کبھی شکوہ نہ کیا
اپنے اشکوں سے مصائب کا ہر اک زخم سیا
باپ کو ہنس کے کلیجے سے لگایا اس نے
حوصلہ ٹوٹے ہوئے دل کو بڑھایا اس نے

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹ تو رحمت ہے

ہائے شبیر جدا ہو گئے بیٹی سے رضا
کیا لکھوں شام غریباں کا عجب منظر تھا
حال پے بیٹے کے پڑھتی تھی اداسی نوحہ
اور مقتل میں تڑپتا تھا پدر کا لاشہ
کسی ذاکر سے نہ شاعر نہ ولی سے پوچھو
پیاس بیٹی کی حسین ابن علی سے پوچھو

بیٹی تو رحمت ہے
اللہ کی رحمت ہے
بیٹی تو رحمت ہے

Khuda Kisi Pay Agar Meharban Hota Hai
To Us Ko Tohfay Mein Beti Ata Woh Karta Hai

Beti To Rehmat Hai

Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Rabb E Akbar Ki Makhsoos Inayat Beti
Beta Maan Baap To Neymat Hai To Rehmat Beti
Raat Din Karti Hai Maan Baap Ki Khudmat Beti
Dil E Veeran Ko Bana Deti Hai Jannat Beti
Gulshan E Zeest Ki Har Shakh Phali Beti Say
Nasl E Paighambar E Chali Beti Say

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Beta Maan Baap Ki Daolat Hai Amanat Beti
Beta Hai Ghar Ka Charagh Aur Azmat Beti
Beta Maan Baap Ki Duniya Hai To Jannat Beti
Beta Maan Baap Ki Taqat Hai To Rahat Beti
Aabroo Kunbay Ki Beti Ki Haya Hoti Hai
Beti Maan Baap Ky Zakhmon Ki Dawa Hoti Hai

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Aik Mazdoor Ki Ghurbat Ka Khazana Beti
Gham Zada Baap Ky Hansnay Ka Bahana Beti
Baap Ki Toot’ti Sanson Ka Maseeha Beti
Baap Ky Honton Ka Makhsoos Tarana Beti
Baap Nay Jaisay Hi Ek Beti Ka Chehra Daikha
Yun Laga Jaisay Kisi Pyasay Nay Dariya Daikha

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Baap Ki Raah Mein Ankhen Hai Bichaye Beti
Kabhi Ghar Mein Kabhi Darwazay Pay Aye Beti
Din Dhalay Jaisay Hi Ek Baap Ko Paye Beti
Kabhi Sar Aur Kabhi Paon Ko Dabaye Beti
Baap Say Hans Ky Galay Jab Yeh Mila Karti Hai
Baap Ki Sari Thakan Door Hua Karti Hai

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Yeh Satai Gai Apnay Kabhi Bey Gaanon Say
Abroo Apni Bachati Rahi Shaitanon Say
Muskura Kar Yeh Guzar Jati Hai Toofanon Say
Khailti Rehti Hai Yeh Apnay Hi Armaanon Say
Zulm Seh Seh Ky Bhi Har Ek Ko Dua Deti Hai
Ashk Pee Leti Hai Har Gham Ko Chupa Leti Hai

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Ghar Ki Izzat Ki Nigehbaan Hai Seerat Is Ki
Aik Anmol Nageena Hai Muhabbat Is Ki
Noor Ankhon Ka Barha Deti Hai Soorat Is Ki
Har Karhay Waqt Mein Parhti Hai Zaroorat Is Ki
Ghar Mein Ronaq Hi Nahi Hoti Bina Beti Kay
Maan Ka Badla Hi Nahi Koi Siwa Beti Kay

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Baap Ko Is Nay Kisi Ranjg Mein Ronay Na Diya
Aik Bey Saya Ko Eesaar Ka Saya Bakhsha
Is Nay Halaat Ka Apnay Kabhi Shikwa Na Kiya
Apnay Ashkon Say Masayeb Ka Har Ek Zakhm Siya
Baap Ko Hans Key Kalaijay Say Lagaya Is Nay
Hosla Tootay Huye Dill Ka Barhaya Is Nay

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Haye Shabbir Juda Ho Gaye Beti Say Raza
Kaye Likhun Sham E Ghareeban Ka Ajab Manzar Tha
Haal Py Beti Ky Parhti Thi Udasi Noha
Aur Maqtal Mein Tarhapta Tha Padar Ka Lasha
Kisi Zakir Say Na Shayer Na Wali Say Poocho
Pyas Beti Ka Hussain Ibne Ali Say Poocho

Beti To Rehmat Hai
Allah Ki Rehmat Hai
Beti To Rehmat Hai

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply