Reciter: Ahmed Raza Nasiri

Intezar E Faraj Lyrics In Urdu By Ahmed Raza Nasiri

الھم عجل لولیک الفرج

میرا عریضہ بنام یوسف زہرا

السلام علیک یا حجۃ اللہ فی ارض

یا امام یا امام یا امام
آپ کا منتظر یہ غلام

میری طرف سے لکھو خط میرے امام کے نام
کہ انتظار فرج میں تڑپ رہا ہے غلام

لکھو کہ درد جگر لا علاج ہے مولا
میرے وطن میں درندوں کا راج ہے مولا
سجی یوں کربوبلا پھر سے آج ہے مولا
یہاں پے حر تو کوئی ابتہاج ہے مولا
پڑے ہیں ماند میرے گھر کے سب چراغ لکھو
قلم اٹھاؤ میرے دل کے داغ داغ لکھو

میری طرف سے لکھو خط میرے امام کے نام
کہ انتظار فرج میں تڑپ رہا ہے غلام

قضا کی گود سناتی ہے لوریاں ان کو
سکھا رہی ہے ابھی چلنا زندگی جن کو
نگل رہی ہے ستم کی یہ تیرگی دن کو
سنے گا کون ہماری صدائے ہل من کو
وہ دن سکون کے گویا کہ خواب جیسے تھے
پڑے ہیں زرد جو چہرے گلاب جیسے تھے

میری طرف سے لکھو خط میرے امام کے نام
کہ انتظار فرج میں تڑپ رہا ہے غلام

شہید باپ کا سینے پہ زخم کھائے ہوئے
نگاہیں راہ میں مولا تیری لگائے ہوئے
تڑپ کے روتے ہیں گودی میں منہ چھپائے ہوئے
سوال کرتے ہیں مادر سے بوکھلائے ہوئے
بتاؤ ظلم زمانے سے دور کب ہو گا
یتیم پوچھتے ہیں ماں ظہور کب ہو گا

ایام غم ہیں یہاں پر قضا کے دریا ہیں
خدا کے دین کے پیچھے پڑے لٹیرے ہیں
ستم کی زد پے ہیں جو بھی غلام تیرے ہیں
سپاہ شمر کے رہبر کے گرد گھیرے ہیں
یزید وقت کی رکتی نہیں ستم رانی
شقی نے مار دیا قاسم سلیمانی

میری طرف سے لکھو خط میرے امام کے نام
کہ انتظار فرج میں تڑپ رہا ہے غلام

اٹھی ہے شام سے زینب کی المدد کی صدا
پکارتی ہے تجھے دیکھ شہہ کی کربوبلا
بلا رہی ہے بقیہ میں فاطمہ زہرا
نقاب رخ سے ہٹا کر اے وارث کعبہ
اسیر شام کو زندان سے چھڑا بیٹا
سکینہ ڈھونڈ رہی ہے مدد کو اے بیٹا

میری طرف سے لکھو خط میرے امام کے نام
کہ انتظار فرج میں تڑپ رہا ہے غلام

نصیب صبح کے تارے کو تیرا نور نہیں
نگاہ عشق کا کعبہ وا کیوں تو نہیں
یہ راز کیا ہے ہمیں اس کا کچھ شعور نہیں
مگر یہ سچ ہے کہ ہم بھی تو بے قصور نہیں
دعائے عہد بھی پڑھتے ہیں شور و شین کے ساتھ
علم یزید کے تابع ہیں دل حسین کے ہاتھ

ملے ہمیں کوئی مہلت کی رات تو شاید
بدل دے حر کہ وہ سوئے نصیب کو شاید
ابھی بھی کوفے میں کوئی حبیب ہو شاید
ہو منتظر تری ہل من صدا کا جو شاید
چراغ خیمہ کسی رات تو بجھا تو سہی
حسین عصر ہمیں آ کے آزما تو سہی

Allah Humma Ajjil Le Waliyekal Faraj

Mera Areeza Banam E Yousuf E Zehra

Assalam O Alaika Ya Hujjat Allahay Fee Arzay

Ya Imam Ya Imam Ya Imam
Aap Ka Muntazir Yeh Ghulam

Meri Taraf Say Likho Khat Meray Imam Kay Naam
Keh Intezar E Faraj Mein Tarhap Raha Hai Ghulam

Likho Keh Dard E Jigar La Ilaj Hai Maola
Meray Watan Mein Darindon Ka Raj Hai Maula
Saji Yun Karbobala Phir Say Aaj Hai Maola
Yahan Pay Hurr To Koi Ibtihaj Hai Maola
Parhay Hain Maand Meray Ghar Kay Sab Charagh Likho
Qalam Uthao Meray Dill Kay Dagh Dagh Likho

Meri Taraf Say Likho Khat Meray Imam Kay Naam
Keh Intezar E Faraj Mein Tarhap Raha Hai Ghulam

Qaza Ki Goud Sunati Hai Lorian In Ko
Sikha Rahi Hai Abhi Chalna Zindagi Jin Ko
Nigal Rahi Hai Sitam Ki Yeh Teergi Din Ko
Sunay Ga Kon Hamari Sadaye Hal Min Ko
Woh Din Sukoon Kay Goya Keh Khawab Jaisay Thay
Parhay Hain Zard Jo Chehray Gulaab Jaisay Thay

Meri Taraf Say Likho Khat Meray Imam Kay Naam
Keh Intezar E Faraj Mein Tarhap Raha Hai Ghulam

Shaheed Baap Ka Seenay Pay Zakhm Khaye Huye
Nigahen Raah Mein Maula Teri Lagaye Huye
Tarhap Ky Rotay Hain Goudi Mein Munh Chupaye Huye
Sawal Kartay Hain Madar Say Bokhlaye Huye
Batao Zulm Zamanay Say Door Kab Ho Ga
Yateem Poochtay Hain Maan Zahoor Kab Ho Ga

Ayaam E Gham Hain Yahan Par Qaza Kay Dairay Hain
Khuda Kay Deen Kay Peechay Parhay Lutairay Hain
Sitam Ki Zadd Pay Hain Jo Bhi Ghulam Teray Hain
Sipah E Shimr Kay Rehbar Kay Gird Ghairay Hain
Yazeed E Waqt Ki Rukti Nahi Sitam Rani
Shaqi Nay Maar Diya Qasim E Suleimani

Meri Taraf Say Likho Khat Meray Imam Kay Naam
Keh Intezar E Faraj Mein Tarhap Raha Hai Ghulam

Uthi Hai Sham Say Zainab Ki Almadad Ki Sada
Pukarti Hai Tujhay Daikh Sheh Ki Karbobala
Bula Rahi Hai Baqaiyyah Mein Fatima Zehra
Naqab Rukh Say Hata Kar Ay Waris E Kaaba
Aseer E Shaam Ko Zindaan Say Churha Beta
Sakina Dhund Rahi Hai Madad Ko Aa Beta

Meri Taraf Say Likho Khat Meray Imam Kay Naam
Keh Intezar E Faraj Mein Tarhap Raha Hai Ghulam

Naseeb Subha Kay Taray Ko Tera Noor Nahi
Nigah E Ishq Ka Kaaba Waa Kiun Too Nahi
Yeh Raaz Kya Hai Hamen Is Ka Kuch Shaoor Nahi
Magar Yeh Sach Hai Keh Hum Bhi To Bey Qasoor Nahi
Dua E Ehd Bhi Parhtay Hain Shor O Shain Kay Sath
Amal Yazeed Kay Tabay Hain Dill Hussain Kay Hath

Milay Hamen Koi Mohlat Ki Raat To Shayad
Badal Day Hurr Kay Woh Soye Naseeb Ko Shayad
Abhi Bhi Koofay Mein Koi Habib Ho Shayad
Ho Muntazir Teri Hal Min Sada Ka Jo Shayad
Charagh E Khaima Kisi Raat Tu Bujha To Sahi
Hussain E Asar Hamen Aa Kay Aazma To Sahi

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply