Reciter: Nadeem Sarwar

Musaferan E Musibat Lyrics In Urdu By Nadeem Sarwar

نہ محمل ہے نہ ہودج ہے
نہ لشکر کی وہ سج دھج ہے
نہ سر پہ علم نہ چادر ہے
اللہ یہ کیسا منظر ہے

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

سفر سے آتے ہیں سوغات درد لاتے ہیں
مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

کیا سلام محمد کے آستانے کو
کٹا کے آئے ہیں زہرا کے سب گھرانے کو
نہ کر قبول تو ہم بے کسوں کے آنے کو
یہ نوحہ کرتے ہیں اور اشک خوں بہاتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

مدینہ ہم تیرے والی کو آئے ہیں کھو کر
مدینہ کوفے میں سر ننگے ہم پھرے در در
مدینہ داغ رسن ہیں ہمارے شانوں پر
اٹھا کے ہاتھ مدینے کو یہ سناتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

ہر اک قدم ہے بکا کب لبوں پہ بین نہیں
ہم آئے زندہ پر زہرا کا نور عین نہیں
مدینہ اکبر و قاسم نہیں، حسین نہیں
یہ کیسے کیسے جواں تھے جو یاد آتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

مدینے والو کہو اس بہن کی کیا تقدیر
جو دیکھے اپنے برادر کے حلق پر شمشیر
لہو میں غرق دیکھے جو حسین کی تصویر
لہو میں کیا یوں ہی بھائی کا سر دکھاتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

بتاؤ کہتے ہیں کیا سب اس اماں جائی کو
جو اربعین تلک دے کفن نہ بھائی کو
بہن دکھائے گی منہ کس طرح خدائی کو
کفن دیا ہے نہ ان کی لحد بناتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

صلاح بشیر یہ دیتا ہوا ہر جا
مگر محلہ ہاشم میں دیکھتا ہے کیا
کہ اک مریضہ سر راہ ہے کھڑی تنہا
ہے منتظر کہ وہ کنبے کے لوگ آتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

خبر یہ پھیلی تو ماتم ہر ایک گھر میں ہوا
نکل نکل پڑیں سب عورتیں برہنہ پا
گری زمین پہ صغرا کہ اس پہ چرخ گرا
جو سوگوار ہیں صغرا کے پاس آتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

فضائے درد میں لے کر اداسیاں آئیں
سفر سے لٹ کے ادھر بھوکی پیاسیاں آئیں
اٹھو رسول تمھاری نواسیاں آئیں
کہ خود کو اونٹوں سے اہل حرم گراتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

جو آئی کان میں آواز بانو مضطر
کہاں ہو اے میرے ولی کے امام جن و بشر
تڑپ کے رہ گئی صغرا بپا ہوا محشر
کبیر بس کہ اب افلاک تھر تھراتے ہیں

مسافران مصیبت وطن میں آتے ہیں

Na Mehmil Hai Na Haaodaj Hai
Na Lashkar Ki Wo Saj Dhaj Hai
Na Sar Py Alam Na Chadar Hai
Allah Yeh Kaisa Manzar Hai

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Safar Sy Aty Hain Soghat E Dard Laty Hain
Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Kiya Salam Muhammad Ky Astanay Ko
Kata Ky Aye Hain Zehra Ky Sab Gharany Ko
Na Kar Kubool Tu Hum Bay Kaso Ky Aany Ko
Yeh Noha Karty Hain Aur Ashk E Khoon Bahatay Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Madina Hum Tery Wali Ko Aye Hain Kho Kar
Madina Kofy Mein Sar Nangy Hum Phiry Dar Dar
Madina Daghe Rasan Hain Hamary Shanon Par
Utha Ky Hath Madiney Ko Yeh Sunaty Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Har Ek Qadam Hai Buka Kab Labon Py Bayn Nahi
Hum Aye Zinda Par Zehra Ka Noor E Ain Nahi
Madina Akbar O Qasim Nahi, Hussain Nahi
Yeh Kaisy Kaisy Jawan Thy Jo Yad Atay Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Madiney Walon Kaho Us Behan Ki Kya Taqdeer
Jo Dekhy Apny Biradar Ky Halq Par Shamsheer
Lahoo Mein Gharq Dekhy Jo Hussain Ki Tasveer
Lahoo Mein Kya Yun Hi Bhai Ka Sar Dikhatey Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Batao Kehty Hain Kya Sab Us Amman Jai Ko
Jo Arbaeen Talak Dy Kafan Na Bhai Ko
Behan Dikhaye Gi Munh Kis Tarah Khudai Ko
Kafan Diya Hai Na Un Ki Lehad Banaty Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Salah Bashir Yeh Deta Hua Khabar Har Jaa
Magar Mahallah E Hashim Mein Dekhta Hai Kya
Ky Ek Mareeza Sar E Rah Hai Kharhi Tanha
Hai Muntazir Ky Woh Kunby Ky Log Atey Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Khabar Yeh Phaili To Matam Har Aik Ghar Mein Hua
Nikal Nikal Parhi Sab Auraten Barehna Paa
Giri Zameen Py Sughra Ky Us Py Charkh Gira
Jo Sogwaar Hain Sughra Ky Pas Atey Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Fiza E Dard Mein Ly Kar Udasiyan Aain
Safar Sy Lut Ky Idhar Bhooki Pyasian Aain
Utho Rasool Tumhari Nawasiyan Aain
Ky Khud Ko Oonton Sy Ahl E Haram Giraty Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Jo Aai Kaan Mein Awaz E Bano E Muztar
Kahan Ho Ay Mery Wali Ky Imam E Jinn O Bashar
Tarhap Ky Reh Gai Sughra Bapa Hua Mehshar
Kabir Bas Ky Ab Aflaak Thartharaty Hain

Musaferan E Musibat Watan Mein Atey Hain

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply