Tu Na Aaya Ghazi Lyrics | Mir Hasan Mir Noha Lyrics | 2021

Tu Na Aaya Ghazi Lyrics in urdu and english text recited by Noha Khuwan Mir Hasan Mir in Ayame Aza of Muharram 2021. View and download Mir Hasan Mir noha lyrics similar to lyrics of Tu na Aya Ghazi on Khairilamal.

Tu na Aya Ghazi mp3 download

To download Jab Rida Sar Se Chini, Tu na Aya Ghazi in mp3 format, please click on below image.

Jab Rida Sar Se Chini Lyrics

Abbas Haye Abbas Haye Abbas

Aal E Emraan Kahan Aur Zindaan Kahan
Ly Behan Qaid Hui Tu Na Aaya Ghazi

Jab rida sar se chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Aa Gai Sham E Alam Lut Gaye Ahl E Haram
Rait Par Jalti Hui Ho Gaya Thanda Alam
Pursa Deny Ky Liye Mujh Sy Milny K Liye
Aa Gaye Baba Ali Tu Na Aaya Ghazi

Jab rida sar se chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Dhop Mein Tu Tha Shajar Tujh Sy Abaad Tha Ghar
Hai Barehna Mera Sar Kya Nahi Tujh Ko Khabar
Ay Alamdar E Wafa Is Behan Ko Ba Khuda
Tujh Sy Dhaaras Thi Barhi Tu Na Aaya Ghazi

Jab rida sar se chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Kya Kahun Shair Mery Bey Rida Hum Ko Liye
Yeh Musalman Sary Shehr Dar Shehar Gaye
Khilqat E Koofa Kabhi Khilqat E Shaam Kabhi
Baarha Hum Py Hansi Tu Na Aya Ghazi

Jab Rida Sar Sy Chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Kitni Bey Bas Thi Behan Ay Shehanshah E Wafa
Naam Ly Ly Ky Mera Jab Yeh Zalim Ny Kaha
Naaz Tha Jis Py Tujhy Ab Bulao Na Usy
Aur Main Roti Rahi Tu Na Aya Ghazi

Jab rida sar se chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Hum Ko Pani Na Mily Teri Khushboo To Rahy
Tery Bazoo Na Katen Chahy Mashkeeza Chidy
Yeh Magar Ho Na Saka Tery Bazoo Hain Juda
Mujh Py Hai Tishna Labi Tu Na Aaya Ghazi

Jab Rida Sar Sy Chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Kya Sakina Sy Kahun Ay Mery Dil Ky Sukoon
Haye Pani Ky Liye Beh Gaya Sab Tera Khoon
Ab Koi Aas Nahi Tu Mery Pas Nahi
Rassi Shaanon Mein Bandhi Tu Na Aaya Ghazi

Jab Rida Sar Sy Chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aya Ghazi

Jab Chali Sheh Py Churi Ay Mery Shair E Jari
Hath Malti Thi Behan Kuch Qadam Door Kharhi
Kat Gaya Sheh Ka Gala Haye Bhai Ny Sada
Tujh Ko Har Zarb Py Di Tu Na Aya Ghazi

Jab Rida Sar Sy Chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aaya Ghazi

Qaid Khaney Mein Qaza Jab Sakina Ko Mili
Dy Ky Kurty Ka Kafan Bachi Dafnai Gai
Us Gharhi Nam Tera Soorat E Nad E Ali
Bas Main Dohrati Rahi Tu Na Aaya Ghazi

Jab Rida Sar Sy Chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aya Ghazi

Roya Rehan Qalam Kar Ky Yeh Bat Raqam
Khoon Mein Doob Gaya Mery Ghazi Ka Alam
Zakhmi Zainab Ka Jigar Khoon Fishaan Shah Ka Sar
Aye Khaimon Mein Shaqi Tu Na Aya Ghazi

Jab rida sar se chini
Main Sada Deti Rahi
Tu Na Aya Ghazi

Tu Na Aaya Ghazi Lyrics in Urdu text

عباس ہائے عباس ہائے عباس

آل عمران کہاں اور زندان کہاں
لے بہن قید ہوئی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

آ گئی شام الم لٹ گئے اہل حرم
ریت پر جلتی ہوئی ہو گیا ٹھنڈا علم
پرسہ دینے کے لئے مجھ سے ملنے کے لئے
آ گیا بابا علی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

دھوپ میں تو تھا شجر تجھ سے آباد تھا گھر
ہے برہنہ میرا سر کیا نہیں تجھ کو خبر
اے علمدار وفا اس بہن کو بخدا
تجھ سے ڈھارس تھی بڑی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

کیا کہوں شیر میرے بے ردا ہم کو لئے
یہ مسلماں سارے شہر در شہر گئے
خلقت کوفہ کبھی خلقت شام کبھی
بارہا ہم پہ ہنسی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

کتنی بے بس تھی بہن اے شہنشاہ وفا
نام لے لے کے میرا جب یہ ظالم نے کہا
ناز تھا جس پہ تجھے اب بلاؤ نہ اسے
اور میں روتی رہی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

ہم کو پانی نہ ملے تیری خوشبو تو رہے
تیرے بازو نہ کٹیں چاہے مشکیزہ چھدے
یہ مگر ہو نہ سکا تیرے بازو ہیں جدا
مجھ پہ ہے تشنہ لبی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

کیا سکینہ سے کہوں اے میرے دل کے سکوں
ہائے پانی کے لئے بہہ گیا سب تیرا خوں
اب کوئی آس نہیں تو میرے پاس نہیں
رسی شانوں میں بندھی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

جب چلی شہہ پہ چھری اے میرے شیر جری
ہاتھ ملتی تھی بہن کچھ قدم دور کھڑی
کٹ گیا شہہ کا گلا ہائے بھائی نے صدا
تجھ کو ہر ضرب پہ دی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

قید خانے میں قضا جب سکینہ کو ملی
دے کے کرتے کا کفن بچی دفنائی گئی
اس گھڑی نام تیرا صورت ناد علی
بس میں دہراتی رہی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

رویا ریحان قلم کر کے یہ بات رقم
خون میں ڈوب گیا میرے غازی کا علم
زخمی زینب کا جگر خون فشاں شاہ کا سر
آئے خیموں میں شقی تو نہ آیا غازی

جب ردا سر سے چھنی میں صدا دیتی رہی تو نہ آیا غازی

Tu Na Aaya Ghazi Lyrics Mir Hasan Mir Noha 2021

Tu Na Aaya Ghazi Lyrics Mir Hasan Mir Noha 2021

Tags:

Jab Rida Sar Se Chini Lyrics

2 responses to “Tu Na Aaya Ghazi Lyrics | Mir Hasan Mir Noha Lyrics | 2021”

  1. Abuzar Abbas says:

    I love this noha 😢😢💔💔

Leave a Reply

Your email address will not be published.