Reciter: Nadeem Sarwar

خیر کرے، خدا خیر کرے
خیر کرے، خدا خیر کرے

اس طرف ظلم پہ آمادہ زمانے والے
اس طرف سارے محمد کے گھرانے والے
کون کس کا ہے طرف دار، خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار خدا خیر کرے

روز عاشور ہواوں سے برستا ہے لہو
لٹ گئی کس کی یہ سرکار خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

یہ تو ممکن ہی نہیں ہے کہ جھکا دیں سر کو
کیا کریں صاحب کردار خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

بھائی جاتے ہیں خدا حافظ و ناصر کہہ کر
بہنیں کہتی ہیں یہ ہر بار خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

وہ جو گھوڑے سے گرا، ساتھ گرے مشک و علم
نہ علم ہے نہ علمدار خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

اتنے صدمے ہیں جو سجاد کو سہنے ہیں ابھی
بیڑیاں ہوتی ہیں تیار، خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

آج بھی سینوں میں زندہ ہے حسین ابن علی
سارا عالم ہے عزادار خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

آنے والے یونہی آتے رہیں روزوں پہ سدا
کم نہ ہوں آپ کے زوار، خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

شہہ کے ماتم میں ہلال ایسی فضا گونج اٹھی
ہوئے لرزاں در و دیوار خدا خیر کرے
کربلا ہو گئی تیار، خدا خیر کرے
یہ قیامت کے ہیں آثار، خدا خیر کرے

خیر کرے، خدا خیر کرے
خیر کرے، خدا خیر کرے

Khuda Khair Kare Lyrics Nadeem Sarwar Noha 2019

Khuda Khair Kare Lyrics Nadeem Sarwar Noha 2019

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply