Reciter: Nadeem Sarwar

Labbaik Labbaik Ya Imam Lyrics In Urdu By Nadeem Sarwar

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

چلی رہی ہیں ظلم و جبر کی محیب آندھیاں
گر رہی ہیں مومنوں کے قلب و جاں پہ بجلیاں
اٹھ رہی ہیں دین مصطفی کی سمت انگلیاں
حجت خدا ہیں آپ جی کو دیجئے امان
ہر قدم پہ اب تو ایک کربلا ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

ہر برس عریضے موج کے سپرد کر چکے
زخم انتظار سے جگر ہمارے بھر چکے
کتنے لوگ جی رہے ہیں کتنے لوگ مر چکے
ضبط کے تمام راستوں سے ہم گزر چکے
لب پہ آپ کے ظہور کی دعا ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

چودہ سو برس سے ظلم سہہ رہے ہیں یا امام
راز کربلا ہر اک سے کر رہے ہیں یا امام
شہہ کے غم میں اشک اب بھی بہہ رہے ہیں یا امام
ظلم کے مقابلے پہ ڈٹ گئے ہیں یا امام
آپ کا جو دل کو ایک حوصلہ ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

جد ہیں آپ کے علی علی ہیں شیر کبریا
سیرت بتول کیا ہے آپ کا ہے مدرسہ
درس صبر آپ نے حسین ہی سے ہے لیا
خاتمہ کریں گے آ کے آپ ظلم و جبر کا
ساتھ آپ کے دعائے سیدہ ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

غیب پر یقیں نہیں جسے وہ منکر خدا
جس کو غیب کر یقیں وہی پڑھے گا لا الہ
لا الہ پڑھ کے ہو گیا رسول آشنا
جو رسول آشنا ہے وہ محب ہے آپ کا
یہ نبی کا اور خدا کا فیصلہ ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

ایک دو نہیں کئی جواں شہید ہو گئے
کربلائے عصر میں ستم مزید ہو گئے
ظلم کے تمام سلسلے شدید ہو گئے
پیروئے یزید آج پھر یزید ہو گئے
آپ کا حسینیوں کو آسرا ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

ماؤں نے پسر بہن نے بھائی نصر کر دیئے
بچے بھی یتیم ہوئے سہاگ بھی اجڑ گئے
باپ نے غم حسین میں لہو جگر کئے
جاری آج بھی ہیں مجلس عزا کے سلسلے
آئیے کہ پنجتن کا واسطہ ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

لاش جب حسین نے اٹھائی تھی جوان کی
قبر جب بنائی تھی صغیر بے زبان کی
آنکھ نم ہوئی تھی جب زمین و آسمان کی
یاد ہے وہی گھڑی حسینی امتحان کی
اپنا غم اسی سبب بھلا دیا ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

السلام علیک یا امام عصر والزماں
الامان الامان اے امام انس و جاں
العجل العجل اے شریکۃ القرآن
آپ کے ظہور کا منتظر تھا یا جہان
سرور و ریحان کی بھی یہ صدا ہے یا امام

کیجئے ظہور یا امام

لبیک لبیک لبیک یا امام
آئیے یا بارہویں امام

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barhawen Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barhawen Imam

Chal Rahi Hain Zulm O Jabar Ki Muheeb Andhian
Gir Rahi Hai Mominon Ky Qalb O Jaan Py Bijlian
Uth Rahi Hain Deen E Mustafa Ki Simt Unglian
Hujjat E Khuda Hain Ap Jee Ko Dijiye Amaan
Har Qadam Py Ab To Aik Karbala Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Har Baras Areezay Maoj Ky Sapurd Kar Chuky
Zakhm E Intezar Sy Jigar Hamaray Bhar Chuky
Kitnay Log Jee Rahy Hain Kitnay Log Mar Chuky
Zabt Ky Tamam Raston Sy Hum Guzar Chuky
Lab Py Ap Ky Zahoor Ki Dua Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Choda So Baras Sy Zulm Seh Rahy Hain Ya Imam
Raz E Karbala Har Ek Sy Kar Rahy Hain Ya Imam
Sheh Ky Gham Mein Ashk Ab Bhi Beh Rahy Hain Ya Imam
Zulm Ky Muqably Py Dat Gaye Hain Ya Imam
Ap Ka Jo Dil Ko Aik Hosla Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Jad Hain Ap Ky Ali Ali Hain Shair E Kibriya
Seerat E Batool Kya Hai Ap Ka Hai Madrisa
Dars E Sabr Ap Ny Hussain Hi Sy Hai Liya
Khatma Karen Gy Aa Ky Ap Zulm O Jabr Ka
Sath Aap Ky Dua E Sayeda Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Ghaib Par Yaqeen Nahi Jisy Woh Munkir E Khuda
Jis Ko Ghaib Par Yaqeen Wohi Parhy Ga La Ilaa
La Ilaha Parh Ky Ho Gya Rasool Ashna
Jo Rasool Ashna Hai Woh Muhib Hai Ap Ka
Yeh Nabi Ka Aur Khuda Ka Faisla Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Aik Do Nahi Kai Jawan Shaheed Ho Gaye
Karbala E Asar Mein Sitam Mazeed Ho Gaye
Zulm Ky Tamam Silsilay Shadeed Ho Gaye
Pairoo E Yazeed Aj Phir Yazeed Ho Gaye
Aap Ka Hussainiyon Ko Aasra Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Maon Ny Pisar Behan Ny Bhai Nasr Kar Diye
Bachay Bhi Yateem Huye Suhaag Bhi Ujarh Gaye
Baap Ny Gham E Hussain Mein Lahoo Jigar Kiye
Jari Aaj Bhi Hain Majlis E Aza Ky Silsilay
Aaiye Keh Panjatan Ka Wasta Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Lash Jab Hussain Ny Uthai Thi Jawan Ki
Qabr Jab Banai Thi Sagheer E Bey Zubaan Ki
Ankh Num Hui Thi Jab Zameen O Aasman Ki
Yad Hain Wohi Gharhi Hussaini Imtehan Ki
Apna Gham Isi Sabab Bhula Diya Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Assalam Alaika Ya Imam E Asar E Waz Zaman
Al Aman Al Aman Ay Imam E Ins O Jaan
Al Ajal Al Ajal Ay Shareekatul Quran
Ap Ky Zahoor Ka Muntazir Tha Yeh Jahan
Sarwar O Rehan Ki Bhi Yeh Sada Hai Ya Imam

Kijiye Zahoor Ya Imam

Labbaik Labbaik Labbaik Ya Imam
Aaiye Ya Barahwen Imam

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply