Reciter: Ahmed Raza Nasiri

Qabr Me Sadiyoun Se Girya Lyrics In Urdu By Ahmed Raza Nasiri

ہائے سیدہ ہائے سیدہ ہائے سیدہ

ہائے مظلومہ ہائے محرومہ
ہائے مظلومہ یا زہرا

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ
ہاتھ پہلو پر ہے نوحہ کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

دھوپ میں جلتی ہوئی تربت پہ سایہ بھی نہیں
فاطمہ زہرا کو پرسہ کوئی دیتا بھی نہیں
بس اکیلی ہائے بابا کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

ضرب سے زخمی سر حیدر پہ رونے کے لئے
یعنی بی بی ساقی کوثر پہ رونے کے لئے
آج بھی آنکھوں کو دریا کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

بھائی سے زہر ستم گر منہ سے جو اگلا گیا
قلب شبر خون میں تر خاک پر بکھرا گیا
ہائے حسن کہہ کر اکٹھا کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

مامتا کو مار ڈالا خنجروں نے تیر نے
آخری سجدہ کیا تھا جس جگہ شبیر نے
اس جگہ ہر روز سجدہ کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

علقمہ روتی ہوئی اہل عزا کی آنکھ سے
اشک غم رومال میں لے کر وفا کی آنکھ سے
تر علی اکبر کا سحرا کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

بال بکھرائے ہوئے اک نور ہے بازار میں
اس کی بیٹی بے ردا ہے مجمع کفار میں
زینب مضطر پہ سایہ کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

صاف کرنے آئی ہیں مقتل زمین کربلا
شام کے زنداں نجف اور کاظمین و سامرہ
غم یہ کنبے کا ہے برپا کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

جب امام عصر خوں روتے ہیں لے کر ہچکیاں
بین یاسر شاہ احمد ناصری کیوں ہو گراں
قبر میں صدیوں سے ایسا کر رہی ہیں فاطمہ

قبر میں صدیوں سے گریہ کر رہی ہیں فاطمہ

Haye Sayeda Haye Sayeda Haye Sayeda

Haye Mazlooma Haye Mehrooma
Haye Mazlooma Ya Zahra

Qabr Me Sadiyoun Se Girya Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadion Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima
Hath Pehloo Par Hai Noha Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Dhoop Mein Jalti Hui Turbat Py Saya Bhi Nahi
Fatima Zehra Ko Pursa Koi Deta Bhi Nahi
Bas Akeli Haye Baba Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Zarb Say Zakhmi Sar E Haider Pay Ronay Kay Liye
Yani Bibi Saqi E Kausar Pay Ronay Kay Liye
Aaj Bhi Ankhon Ko Dariya Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Bhai Say Zehr E Sitam Gar Munh Say Jo Ugla Gaya
Qalb E Shabbar Khoon Mein Tarr Khak Par Bikhra Hua
Haye Hasan Keh Kar Ikatha Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Maamta Ko Mar Dala Khanjaron Nay Teer Nay
Akhri Sajda Kiya Tha Jis Jaga Shabbir Nay
Us Jaga Har Roz Sajda Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Alqama Roti Hui Ahl E Aza Ki Ankh Say
Ashk E Gham Roomal Mein Lay Kar Wafa Ki Ankh Say
Tar Ali Akbar Ka Sehra Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Baal Bikhraye Huye Ek Noor Hai Bazar Mein
Us Ki Beti Bey Rida Hai Majma E Kuffar Mein
Zainab E Muztar Pa Saya Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Saaf Karnay Aai Hain Maqtal Zameen E Karbala
Sham Kay Zindaan Najaf Aur Kazmain O Saamra
Gham Yeh Kunbay Ka Hai Barpa Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Jab Imam E Asar Khoon Rotay Hain Lay Kar Hichkiyan
Bayn Yasir Shah Ahmed Nasiri Kiun Ho Garaan
Qabr Mein Sadiyon Say Aisa Kar Rahi Hain Fatima

Qabr Mein Sadiyon Say Giriya Kar Rahi Hain Fatima

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply