Reciter: Ahmed Raza Nasiri

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba Lyrics In Urdu By Ahmed Raza Nasiri

یا رسول اللہ اے میرے بابا
یا حبیب اللہ اے میرے بابا
اے میرے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا
درد جو بعد تیرے میں نے اٹھائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

آ کے ٹھہرے ہیں میرے در پے نہ بھیجا ہے سلام
دن کو دو پہر ڈھلے اب تو اتر آئی ہے شام
مجھ کو ملنے کے لئے آج نہ آئے بابا
نہ آئے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

مجھ پہ مرنے وہ تیرے عشق میں جینے والے
ایسے بدلے ہیں تیرے بعد مدینے والے
تیرے احکام بھی حزیان بتائے بابا
بتائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

اب تو حیدر سے مسلمان خفا رہتے ہیں
جانے کس سوچ میں گم شیر خدا بیٹھے ہیں
کب سے آنگن میں یوں ہی سر کو جھکائے بابا
جھکائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

تیرے فرقت میں ہوئے بچے یوں بے چین میرے
لگ کے منبر سے تیرے روتے ہیں حسنین کھڑے
کون بہلا کے انہیں سینے لگائے بابا
لگائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

آج مسجد میں اذاں دینے نہیں آئے بلال
غم سے بوذر تو کہیں بہتے ہیں عمار نڈھال
اب کہاں جائیں زمانے کے ستائے بابا
ستائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

آ کے سلمان چچا در پے کھڑے رہتے ہیں
اب مدینے میں میرا کوئی نہیں کہتے ہیں
وا محمد کی صدا اٹھتی ہے ہائے بابا
ہائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

بھول بیٹھے تھے سبھی تجھ کو سقیفہ جا کر
ان کو بخشش کی دعا تو نے دی پتھر کھا کر
تیری میت پہ بھی وہ لوگ نہ آئے بابا
نہ آئے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

چودہ صدیوں میں بھی کچھ طور نہ بدلے ان کے
بغض شبیر میں نکلے ہیں لعیں گھر گھر سے
آج پھر نیزوں پہ قرآن اٹھائے بابا
اٹھائے بابا

اپنے غم فاطمہ اب کس کو سنائے بابا

Ya Rasool Allah Ay Merey Baba
Ya Habib Allah Ay Mere Baba
Ay Mere Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba
Dard Jo Baad Teray Main Nay Uthaye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Aa Kay Thehray Hain Meray Dar Pay Na Bheja Hai Salam
Din Ky Do Pehr Dhalay Ab To Utar Aai Hai Sham
Mujh Say Milnay Kay Liye Aaj Na Aaye Baba
Na Aaye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Mujh Pay Marnay Woh Teray Ishq Mein Jeenay Walay
Aisay Badlay Hain Teray Baad Madinay Walay
Teray Ehkaam Bhi Hiziyaan Bataye Baba
Bataye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Ab To Haider Say Musalman Khafa Rehtay Hain
Janay Kis Soch Mein Gum Shair E Khuda Bethay Hain
Kab Say Aangan Mein Yun Hi Sar Ko Jhukaye Baba
Jhukaye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Teri Furqat Mein Huye Bachay Yun Bechain Meray
Lag Kay Minbar Say Teray Rotay Hain Hasnain Kharhay
Kon Behla Kay Inhen Seenay Lagaye Baba
Lagaye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Aaj Masjid Mein Azaan Denay Nahi Aaye Bilal
Gham Say Boozar To Kahin Bethay Hain Ammar Nidhal
Ab Kahan Jayen Zamanay Kay Sataye Baba
Sataye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Aa Kay Salman Chacha Dar Pay Kharhay Rehtay Hain
Ab Madinay Mein Mera Koi Nahi Kehtay Hain
Waa Muhammad Ki Sada Uthti Hai Haye Baba
Haye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Bhool Bethay Thay Sabhi Tujh Ko Saqeefa Ja Kar
Un Ko Bakhshish Ki Dua Tu Nay Di Pathar Kha Kar
Teri Maiyat Pay Bhi Woh Log Na Aaye Baba
Na Aaye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Choda Sadiyon Mein Bhi Kuch Tor Na Badlay In Kay
Bughz E Shabbir Mein Niklay Hain Laeen Ghar Ghar Say
Aaj Phir Naizon Pay Quran Uthaye Baba
Uthaye Baba

Apne Gham Fatima Ab Kisko Sunaye Baba

Join Khairilamal on WhatsApp

WhatsApp

Leave a Reply